21 February, 2012 16:07


ISLAMABAD TONIGHT

WITH NADEEM MALIK

21-02-2012

عجیب بات ہے کہ رحمان ملک نے بینظیر کیس پر بیان دینے کے لئیے قومی کی بجائے سندھ اسمبلی کو چنا۔ ڈاکٹر شاہد کی اسلام آباد ٹونائٹ میں گفتگو

مجھے بتایا گیا تھا کہ زرداری صاحب ناہید خان اور رحمان ملک کو بالکل پسند نہیں کرتے۔ ڈاکٹر شاہد

رحمان ملک کو بعد میں کسی غیر ملک سے فون کال آنے پر زرداری نے رکھ لیا۔ ڈاکٹر شاہد

رحمان ملک جھوٹ بول رہے ہیں بینظیر کی شہادت کے وقت یہ موقع پر موجود نہیں تھے۔ اسلم چوہدری

میں نے رحمان ملک کو اطلاع دی تھی کہ بینظیر شہید کر دی گئی ہیں۔ اسلم چوہدری

سترہ جولائی، اٹھارہ اکتوبر اور بینظیر کی شہادت کے واقعات کا ایک ہی ماسٹر مائنڈ ہے۔ ڈاکٹر اسرار شاہ

بینظیر کی شہادت اور دوسرے واقعات کا ماسٹر مائنڈ اعجاز شاہ ہے۔ ڈاکٹر اسرار شاہ

بینظیر کی شہادت سے پہلے کے واقعات ان کے لئیے وارننگ تھی کہ پاکستان آئیں تو یہ سلہوک کیا جائے گا۔ڈاکٹر اسرار شاہ

زرداری مسلم لیگ ق کو قاتل کہنے پر ہم سے معزرت کر چکے ہیں۔ شیخ وقاص اکرم

رحمان ملک کے بیان سے ہم بیقصور ثابت ہو گئے ہیں۔ وقاص اکرم

رحمان ملک کے بیان سے بہت سے سوالات اٹھیں گے اور پیپلز پارٹی کا کارکن مطمئین نہیں ہو گا۔ وقاص اکرم

میں زاتی طور پر رحمان ملک کے بینظیر کیس پر بیان پر مطمئین نہیں ہوں۔ وقاص اکرم

شہادت کے دن بینظیر بھٹو بلٹ پروف جیکٹ پہنے ہوئیں تھیں۔ ڈاکٹر شاہد

خالد شہنشاہ کو کردار بہت مشکوک تھا انہیں زرداری نے امریکہ سے بلا کر بینظیر کی سکیورٹی کا زمہ دیا۔ ڈاکٹر شاہد

خالد شہنشاہ کو سرکاری لوگوں نےبعد میں ایک جگہ بلا کر قتل کر دیا۔ ڈاکٹر شاہد

اٹھارہ اکتوبر کے واقع کی خود بی بی نے ایف آئی آر درج کروائی تھی۔ اسلم چوہدری

آج سندھ میں پیپلز پارٹی کی حکومت ہونے کے باوجود اٹھارہ اکتوبر کے واقع کا کچھ نہیں بنا۔ اسلم چوہدری

بینظیر کے چہرے پر زخم ایک طرف تھا جبکہ گولی دوسری طرف سے چلائی گئی تھی۔ ڈاکٹر شاہد

بی بی کے بھائی پیپلز پارٹی کی قیادت سے ان کی شہادت کا انتقام ضرور لیں گے۔ ڈاکٹر اسرار شاہ

جو لوگ بی بی کے ساتھ گاڑی میں تھے کھڈے لائن لگا دئیے گئے اور موقع سے بھاگ جانے والے حکومت میں بیٹھے ہیں۔ ڈاکٹر شاہد

اس سے پہلے کہ کوئی انگلی اٹھائے ایوان صدر کو بینظیر کی شہادت کی تحقیقات کروانی چاہییں۔ ڈاکٹر اسرار شاہ

زرداری صاحب چیف جسٹس کو کہہ رہے ہیں کہ بینظیر کی شہادت کی تحقیقات کروایں۔ ڈاکٹر شاہد

Advertisements