31 May, 2016 17:17


NADEEM MALIK LIVE

http://videos.samaa.tv/NadeemMalik/

31-MAY-2016

نواز شریف کا کامیاب آپریشن ہو گیا ہے اور انہیں آئی سی یو میں منتقل کر دیا گیا ہے۔ محمد زبیر کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

وزیراعظم کی بیماری کے باوجود امور سلطنت چلتے رہے انہوں نے وڈیو لنک کے زریعے کیبنٹ میٹنگ میں شرکت کی ہے۔ محمد زبیر

نواز شریف پاکستان کے وزیراعظم ہیں اللہ کا شکر ہے کہ ان کا آپریشن کامیاب رہا ہے۔ عارف علوی

امریکہ جیسے ملک میں اگر صدر کو کوئی مسئلہ ہو جائے تو وہ کسی نہ کسی کو اپنے اختیارات دیتا ہے۔ عارف علوی

ہمیں بھی قانون بنانا پڑے گا کہ ملک کے چیٖف ایگزیکٹو کی غیر موجودگی میں کوئی دوسرا کام کر سکے۔ عارف علوی

کچھ دیر پہلے حسین نواز سے بات ہوئی ہے نواز شریف کا آپریشن کامیاب ہوا ہے۔ سراج الحق

سیاست اور اختلافات اپنی جگہ پر لیکن بیماری انسانی مسئلہ ہے کسی کو بھی ہو سکتا ہے۔ سراج الحق

پاکستان میں بیس کروڑ عوام ہیں کیا ہی اچھا ہوتا کہ سب کا علاج ادھر ہی ہو سکتا امیر آدمی تو باہر جا سکتا ہے غریب نہیں جا سکتا۔ سراج الحق

مہاتیر محمد کو بھی تکلیف ہوئی تھی ڈاکٹرز نے کہا کہ باہر سے علاج کروایں تو انہوں نے کہا کہ اگر میں اپنے ڈاکٹرز اور ہسپتالوں پر اعتماد نہیں کروں گا تو لوگ بھی نہیں کریں گے۔ سراج الحق

عام لوگ بھی علاج کے لئیے باہر جاتے ہیں لیکن ملک کے اندر ایک تو ایسا ہسپتال ہو کہ جہاں حکمران علاج کے لئیے جایں۔ سراج الحق

امید ہے کہ نواز شریف اپنے دل کے آپریشن کے بعد پاکستان میں ایک کوالٹی کا ہسپتال بنا دیں کہ آئندہ کسی کو باہر جانے کی ضرورت پیش نہ آئے۔ سراج الحق

اچھا ہوتا کہ پاناما لیکس میں ہمارے مسلمان حکمرانوں کے نام نہ ہوتے لیکن ان کے نام بھی ہیں۔سراج الحق

امریکہ اور یورپی ممالک دوسروں کو تو ایمانداری کا سبق دیتے ہیں لیکن اپنے ملکوں میں کرپشن کا پیسہ رکھنے کی جگہ بھی بنا رکھی ہیں۔ سراج الحق

میں نہیں سمجھتا کہ حکومت کوئی ایسے اقدامات کرے گی کہ آئیندہ کرپشن کی روک تھا ہو سکے۔ سراج الحق

زیادہ تر لوگ اپنے کرپشن کے پیسے کو چھپانے کے لئیے آف شور کمپنیاں بناتے ہیں۔ سراج الحق

ایک نظام بن جانا چاہئیے کہ جو بھی کرپشن کرے سب کے لئیے ایک ونڈو ہو۔ سراج الحق

سراج الحق دوسروں پر تنقید کرتے ہیں لیکن خود کے پی کے میں احتساب کے محکمے کو تالا لگایا ہوا ہے۔ محمد زبیر

آج ٹی او آرز پر اس لئیے کوئی فیصلہ نہیں ہو سکا کیونکہ حکومتی نمائیندے وزیراعظم کے صحت کے لئیے دعا کرنے میں مصروف تھے۔ اعتزاز احسن

کسی کے بیمار پڑنے کی وجہ سے امور سلطنت رک نہیں جایا کرتے۔ اعتزاز احسن

حکومت کو چاہئیے تھا کہ اسحق ڈار کی بجائے کسی اور کو ٹی او آرز کی کمیٹی کا رکن بناتے وہ تو بجٹ کی وجہ سے بہت مصروف ہیں۔ اعتزاز احسن

میں نے کہا کہ ٹی او آرز پر کچھ تو پیشرفت کر لیں لیکن حکومتی ٹیم نے کہا کہ نہیں آج وزیراعظم کی سرجری ہے۔ اعتزاز احسن

اگر ٹی او آرز نہ بنے اور کوئی سمجھوتہ نہ ہوا تو حکومت کو بہت نقصان اٹھانا پڑے گا۔ اعتزاز احسن

پاناما پیپرز میں جن جن کا بھی نام آتا ہے ان سب کا اور ان کے خاندانوں کا احتساب ہونا چاہئیے۔ اعتزاز احسن

پاکستان میں امیر اور غریب میں یہی فرق ہے کہ امیر کا علاج بیرون ملک جبکہ غریب کا علاج ملک میں ہوتا ہے۔ عارف علوی

عبدالستار ایدھی بیمار ہیں لیکن کراچی کے ایک ہسپتال میں زیر علاج ہیں۔ عارف علوی

مسلم لیگ ن خود پر لگنے والے الزام کا جواب نہیں دیتی بلکہ دوسرے پر الزام لگانا شروع کر دیتی ہے۔ عارف علوی

ملک کا نظام وزیراعظم کی بیماری کیو جہ سے اس لئیے رک گیا ہے کیونکہ سارے فیصلے نوازشریف اور ان کے خاندان کے چند لوگ کرتے ہیں۔ عارف علوی

ٹی او آرز کی ڈیڈ لائین اگر ایک یا دو دن آگے ہو جائیے گی تو اس پر اتنی بحث نہیں ہونی چاہئیے تھی جتنی ہو رہی ہے۔ محمد زبیر

حکومت چھ مہینے پہلے ملک میں غریبوں کے مفت علاج کا پروگرام شروع کر چکی ہے وہ کسی بھی ہسپتال میں جا سکتے ہیں۔ محمد زبیر