13 March, 2017 16:26


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

13-MARCH-2017

الزامات درست تھے یا نہیں لیکن یہ بات درست ہے کہ ایم کیو ایم کے بارے میں تاثر اچھا نہیں تھا ۔ آج کے واحد مہمان ڈاکٹر فاروق ستار کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

ہمارے لوگوں کے روئیے بھی ایسے تھے کہ کوئی اچھا تاثر نہیں جا رہا تھا۔

بائس اگست کو تو حد ہی ہو گئی الطاف حسین نے کہا کہ پاکستان کو توڑنے کے لئیے جس سے بھی مدد لینا پڑی لیں گے۔

ہم نے اپنے اور ماضی کے درمیان ایک لکیر کھینچ دی ہے اب ہم نے واپس نہیں جانا ہے۔

ہمارے لوگوں کو پکڑا جا رہا ہے کہ فلاں پارٹی میں شامل ہو جاؤ ایسا ہوتا رہا تو پھر ہم ناکام ہو جایں گے۔

ستر سے اسی فیصد ورکرز اور اٹھانوے فیصد ووٹرز ہمارے ساتھ ہیں۔

اس سے زیادہ کوئی بات جھوٹی نہیں ہو سکتی کہ ہمارے آٹھ نو لوگ پی ایس پی میں جانا چاہتے ہیں لیکن میں انہیں نہیں چھوڑ رہا۔

ہم پڑھے لکھے لوگ ہیں اور ہم نے عدم تشدد کی سیاست کرنی ہے۔

ہم پرویز مشرف کو پاکستان کی سیاست میں خوش آمدید کہتے ہیں انہوں نے ایم کیو ایم کو مین سٹریم پارٹی بننے میں مدد کی۔

پرویز مشرف چاہتے ہیں کہ ایم کیو ایم اور پی ایس پی ختم ہو جایں اور وہ ایک نئی پارٹی بنایں جس میں یہ شامل ہو جایں۔

پرویز مشرف ایم کیو ایم کا حصہ تو بن سکتے ہیں لیکن ہماری پارٹی میں کوئی ایسا عہدہ نہیں ہے کہ جسے وہ پر کریں گے۔

ہماری جماعت نے کئی بار مراد علی شاہ سے ملنے کی کوشش کی ہے لیکن اب تک کامیاب نہیں ہو سکی۔

سو دنوں میں ہم نے کراچی کی پندرہ یو سی کو صاف کیا ہے ہم اتنا ہی کر سکتے تھے ہمارے پاس وسائل نہیں ہیں۔

وسیم اختر کو اختیارات دیں تو وہ سارے کراچی شہر کوصاف کر سکتے ہیں۔

وزیراعظم کراچی آتے ہیں وزیراعلی کے کان میں کچھ کہتے ہیں ایک موٹر وے کا افتتاح کرتے ہیں اور چلے جاتے ہیں۔

وزیراعظم سمجھتے ہیں کہ پنجاب سب سے بڑا صوبہ ہے اس پر ہی فوکس رکھیں تا کہ ان کی حکومت قائم رہے۔

کراچی میں دیر پا امن قائم کرنے کے لئیے ادروں کے علاوہ ہر علاقعے کے لوگوں سے بھی معلومات لینی چاہئییں۔

کراچی آپریشن سے جرائم میں کمی ہوئی ہے لیکن اصل چیلنج اس کامیابی کو قائم رکھنا ہے۔

کراچی میں آج بھی بھتہ خوری اور چائنہ کتنگ ہو رہی ہے کون کر رہا ہے یہ میں آئندہ کسی پروگرام میں بتاؤں گا۔

آج بھی کراچی میں سرکاری زمینوں پر شادی ہال بن رہے ہیں۔

مردم شماری کے سربراہ کو میں نے تئیس سوالات بھیجے تھے انہوں نے آج تک ان کا جواب نہیں دیا۔

پچھلے کچھ عرصے میں کراچی کی نسبت دیہی علاقعوں کی آبادی میں زیادہ اضافہ دکھایا گیا ہے۔

آبادی ہمیشہ شہروں کی بڑھتی ہے دیہی علاقعوں کی نہیں اس بات کا جواب ملنا چاہئیے۔

پاناما کا فیصلہ ایسا ہونا چاہئیے کہ جس سے جمہوریت مظبوط ہو اور اس فیصلے پر ہی اگلے الیکشن کا بھی انحصار ہو گا۔

http://naeemmalik.wordpress.com/

Advertisements